اہل قبور سنتے دیکھتے، اور محسوس کرتے ہیں
:سوال
اہل قبور سنتے دیکھتے، اور محسوس کرتے ہیں، کیا اس کے اثبات میں صحابہ کرام اور ائمہ دین اقوال ہیں؟
: جواب
فقیر غفرلہ للہ تعالی (اعلی حضرت رحمہ اللہ علیہ ) اگر بقدر قدرت ان کے حصر و استقصاء ( احاطہ کرنے) کا ارادہ کرے موجز عجالہ حد مجلد سے گزرے، لہذا اولاً صرف سو (100) ائمہ دین و علماء کاملین کے اسماء طیبہ شمار کرتا ہوں جن کے اقوال اس وقت میرے پیش نظر اور اس رسالہ کے فصول و مقاصد میں جلوہ گر و فضل اللہ سبحانہ اوسع واکثر ( اور اللہ سبحانہ کا فضل اور زیادہ وسیع و فزوں تر ہے ) پھر دس نام ان عالموں کے بھی حاضر کروں گا جن پر اعتماد میں مخالف مضطر ۔
:فمن الصحابتہ رضوان اللہ تعالی اجمعین علیہم اجمعین ( صحابہ علیہم الرضوان میں سے )
امیر المؤمنین عمر فاروق اعظم (2) امیر المؤمنین علی مرتضی (3) حضرت عبداللہ بن مسعود (4) حضرت سلیمان فارسی (5) عمرو بن عاص (6) عبداللہ بن عمر (7) ابوھریرہ (8) عبد اللہ بن عمرو (9) عقبہ بن عامر (10) ابوامامہ بابلی (11) صحابی اعرابی صاحب حدیث حيثما مررت وغیر ہم رضی اللہ تعالی عنہم۔
اور میں ان کے سوا ان صحابہ کرام کے نام یہاں شمار نہیں کرتا جنھوں نے سماع و ادراک موتی حضور اقدس صلی اللہ تعالی علیہ وسلم سے روایت کیا یا حضور کی زبان پاک سے سُنا۔
:و من التابعین رحمہ اللہ تعالی علیہم اجمعین ( تابعین علیہم الرحمہ میں سے )
مجاہدمکی (13) عمرو بن دینار (14)بکر مزنی (15) ابن ابی لیلی (16) قاسم بن مخیمرہ (17) راشد بن سعد (18) ضمرہ بن حبيب (19) حکیم بن عمیر (20) علاء بن لجلاج (21) بلال بن سعد (22) محمد بن واسع (23) ام الدرداء وغیر ہم رحمہم اللہ تعالی ۔
:و من تبع تابعین لطف الله بهم یوم الدین ( تبع تابعین علیہم الرحمہ میں سے )
عالم قریش سیدنا ابو محمد بن ادریس شافعی (25) عالم کو فہ فقیہ مجتہد امام سفیان (26) عبدالرحمن بن العلاء و غیر ہم روح اللہ تعالی ارواحہم ۔
:و من اعاظم السلف واکارم الخلف نور اللہ تعالی مراقدهم
عالم اہلبیت رسالت حضرت امام علی بن موسی بن جعفر بن محمد بن علی بن حسین بن علی و بتول بنت رسول اللہ صلی اللہ تعالی علیہ علیہم (28)امام اجل عارف باللہ محمدبن علی حکیم تر مذی (29) اما م محدث جلیل کبیر اسمعیل (30)امام فقیہ عابد وزاہداحمد بن عصمہ ابوالقاسم صفار حنفی بدو واسطہ شاگرد امام ابو یوسف و امام محمد رحمہ الله تعالی (31) امام ابوبکر احمد بن حسین بہیقی شافعی (32) امام ابو عمر یوسف بن عبد البر مالکی (33) امام ابو الفضل محمد بن احمد حاکم شہید حنفی صاحب کافی (34) امام ابو الفضل قاضی عیاض یحصبی مالکی (35) امام حجتہ السلام مرشد الا نام ابو حامد محمدمحمد غزالی (36) امام ابو عبد الله محمد بن احمد بن فرح قرطبی صاحب تذکره (37) امام شمس الائمہ حلوائی حنفی (38) امام عارف باللہ فقیہ زاہد (39) امام محدث محی الدین طبری شافعی (40) امام ربانی سید نا علاء الدین سمنانی (41) امام ابو المحاسن حسن بن علی ظہیر الدین کبیر مرغینانی حنفی استاذا مام قاضی خاں و صاحب خلاصہ (42) بعض اساتذہ امام شیخ الاسلام علی بن ابی بکر برہان الدین فرغانی حنفی صاحب التجنیس والمزيد (43) اما فقيه النفس قاضی حسن بن منصور فرغانی اوز جندی حنفی (44) امام ابو ذکریا یحی بن شرف نووی شافعی صحیح مسلم (45) امام فخرالدین محمد رازی شافعی (46) امام سعد الدین تفتازانی مصنف و شارح مقاصد (47) امام ابوسلیمن احمد بن ابراہیم خطابی (48) اماابو القاسم عبد الرحمن بن عبد اللہ بن احمد سہیلی صاحب الروض (49) امام عمر بن محمد بن عمر جلال الدین خبازی حقی صاحب فتاوی خبازیہ (50) صاح عیاب حنفی تلمیذ امام اجل قاضی خاں (51) علامہ محمود بن محمد لولوی بخاری حنفی صاحب حقائق شرح منظومہ نسفیہ تلمیذ التمیذامام شمس الائمہ کردی (52) سیدی یوسف بن عمر صوفی حنفی صاحب مضمرات (53) امام عارف باللہ صدرالدین قونوی (54) امام شہاب الدین فضل اللہ بن حسین تور پشتی حفی (55) امام ملک العلماء عز الدین بن عبد السلام شافعی (56) امام محدث زین الدین مراغی (57) امام ابو عبدالله محمد بن احمد بن علی بن جابر اندلسی (58) قاضی ناصر الدین بیضاوی شافعی صاحب تفسیر (59) امام ابوعبد الله بن النعمان صاحب سفينة النجاه لاہل الالتجاء في كرامات الشيخ ابى النجاء (60) امام عارف بالله عبد الله بن اسعد یافعی شافعی صاحب روض الریاحین (61) امام علامہ سید الحفاظ ابو علی ابوالفضل احمد بن علی ابن حجر عسقلانی شافعی صاحب فتح الباری شرح صحیح بخاری (62) امام شمس الدین محمد بن یوسف کرمانی حنفی صاحب کواکب الدراری شرح صحیح بخاری (63) امام علامہ شافعی صاحب شفاء السقام (64) امام شمس الدین محمد بن عبد الرحمن سخاوی شافعی صاحب ارتیاح الا کباد بفقد الاولیاء (65) امام خاتم الحفاظ مجد د المائة التاسعه ابوالفضل جلال الدین بن عبد الرحمن سیوطی صاحب شرح الصدور و بدور سافرہ انیس الغریب وزہر الر بی شرح سنن نسائی وغیرہ (66) امام علامہ محمد بن احمد خطیب قسطلانی شافعی صاحب مواهب لدنیہ وارشاد الساری شرح صحیح بخاری (67) امام شہاب الدین رملی انصاری شافعی (68) سیدی ولی اللہ احمد زروق (69) سید عارف باللہ بوالعباس حضرمی (70) امام احمد بن محمد بن حجر کی شافعی شارح مشکوۃ (71) محق علامہ محمد محمد محمد ابن امیر الحاج حنفی صاحب حلیہ شرح منیہ (72) امام محمد عبدری کی مالکی (73) امام صدر کبیر حسام الدین شهید عمر بن عبد العزیز صاحب فتادی کبرای حنفی (74) امام محمد بن محمد بن شہاب الدین بزازی حنفی صاحب بزاز یہ (75) علامہ نورالدین سمہودی شافعی صاحب خلاصته الوفاء في اخبار دار المصطفی صلى اللہ تعالی علیہ سلم (76) علامہ رحمة الله سندی حنفی صاحب مناسک ثلثه (77) علامہ نورالدین علی بن ابراہیم بن احمد حلبی شافعی صاحب سيرة انسان العيون (78) امام عارف بالله عبد الوہاب شعرانی شافعی صاحب میزان الشريعة الکبری (79) علامہ محمد بن یوسف شامی صاحب سبل الہدی والرشاد في سيرة خير العباد علی اللہ تعالی علیہ وسلم (80) علامہ محمد بن عبد الباقی زرقانی مالکی صاحب شرح مواہب (81) علامہ عبد الرؤف محمد مناوی صاحب تیسیر شرح جامع صغیر (82) امام ابو بکر بن محمد بن علی حدادی حنفی صاحب جوہرہ نیرہ شرح قدوری (83) علامہ ابراہیم بن محمد ابراہیم حلبی حنفی صاحب غنیتہ شرح منیہ (84) فاضل علی بن سلطان محمد قاری مکی خنفی صاحب مرقاۃ شرح مشکوة (85) علامہ محمد بن احمد بن جموی حنفی استاد محقق شر بتلائی (86) علامہ ابوالا خلاص حسن بن عمار مصری شرنبلالی حنفی صاحب نور الایضاح و امداد الفتاح و مراقی الفلاح (87) علامہ خیر الدین رملی حنفی صاحب فتاوی خیریہ استاذ صاحب در مختار (88) فاضل مدقق محمد بن علی دمشقی حصکفی شارح تنویر (89) سیدی عارف بالله عبد الغنی بن اسمعیل بن عبد الغنی نابلسی حنفی صاحب حدیقہ ندیہ شرح طریقہ محمدیہ (90) سید علامہ ابوالسعود محمد حنفی (91) مولانا عارف باللہ نور الدین جامی حنفی صاحب نفحات (92) شیخ محقق بركة رسول الله صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم فی الہند مو ہند مولانا عبد الحق بن سیف الدین محدث دہلوی حنفی صاحب لمعات واشعة اللمعات وجامع البركات وجذب القلوب ومدارج النبوة (93) فاضل محدث مولنا محمد طاہر فتنی احمد آبادی حنفی صاحب مجمع بحار الانوار (94) فاضل شیخ الاسلام دہلوی حنفی صاحب کشف الغطا (95) مولنا شیخ جلیل نظام الدین وغیرہ جامعان فتاوی عالمگیری حنفیان (96) بحر العلوم ملك العلماء مولانا ابوالعبا ش محمد بن عبدالعلی لکھنوی حنفی (97) خاتمه المحققین علامہ غنیمی حنفی (98) فاضل سید احمد مصری طحطاوی حنفی 99 سیدی امین الدین محمد شامی خنفی محشیان شرح علائی (100) سیدی جمال بن عبداللہ بن عمرکی حنفی وغیرہم برد الله تعالی مضاجعهم –
:تنبيہ
فقیر غفراللہ تعالی نے ان ائمہ سلف و علمائے خلف سے صرف سے انھی اکابر کے اسمائے طیبہ گنے جن کے کلام میں خاص سماع و ادراک و علم و شعور اہل قبور کے نصوص خاص قاہرہ یا دلائل باہرہ ہیں، پھر ان میں بھی حصر استیعاب کا قصد نہ کیا۔۔
بلکہ حاشاوہ بھی بالتمام ذکر نہ کیے جن کے اقوال ہدایت اشتمال اس وقت میرے سامنے جلوہ فرما متيسر حالت حاضرہ ہیں، فتلك مائة كاملة فيهم وفاء لقلوب عاقلة ( یہ مکمل سو ہیں جو اصحاب فہم کے لیے کافی ہیں )
اب انھیں لیجئے جن پر اعتماد مخالف کو ضرور : (1) شاہ ولی اللہ صاحب (2) ان کے والد ماجد شاہ عبدالرحیم صاحب (3) ان کے فرزند ارجمند مولنا شاہ عبدالعزیز صاحب (4) ان کے برادر مولنا شاہ عبد القادر صاحب (5) ان کے ممدوح جناب میرزا مظہر جانجاناں (6) ان کے مرید رشید قاضی ثناء اللہ صاحب پانی پتی (7) مولوی اسحاق صاحب دہلوی (8) ان کے شاگرد نواب قطب الدین خاں دہلوی (9) مولوی خرم علی صاحب بلہوری (10) ان سب سے قوی مجتہد نو میاں اسمعیل دہلوی۔
READ MORE  کیا موت سے روح میں اصلاً تغیر نہیں ہوتا؟

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to Top