پہلے حج کرے یا مدینہ منورہ میں روضہ انور پر حاضری؟
:سوال
پہلے حج کرے یا مدینہ منورہ میں روضہ انور پر حاضری؟
:جواب
علمائے کرام نے دونوں صورتیں لکھی ہیں چاہے پہلے سرکار اعظم ﷺمیں حاضر ہو اس کے بعد حج کرے یہ ایسا ہوگا جیسے صبح کے فرضوں سے سنتیں مقدم ہیں اور حاضری بارگاہ مقدسﷺ اس کے لیے قبول حج کا سامان فرمادے گی ان شاء اللہ الکریم ثم رسولہ الرؤف الرحیم علیہ وعلی آلہ اکرم الصلوۃ والتسلیم، اور چاہے تو حج کے بعد حاضر ہو یہ ایسا ہو گا جیسے مغرب کے فرضوں کے بعد سنتیں ۔
حج اگر مبرور ہے اُسے گناہوں سے پاک کر کے اس قابل کر دے گا کہ زیارت قبر انور کرے۔یہ سب اس صورت میں ہے کہ مکہ معظمہ کو جاتے میں مدینہ طیبہ راستہ میں نہ پڑے اور اگر ایسا ہے جیسا شام سے آنے والوں کے لیے تو پہلے حاضری در بار انور ضروری ہے، خلاف ادب ہے کہ بے حاضر ہوئے حج کو چلا جائے ۔ واللہ تعالیٰ اعلم
READ MORE  کاشتکاری کی زمین پر زکوۃ ہوگی یا عشر؟

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to Top