فجر کی نماز کے واسطے لوگوں کوان کے گھر جا کر بتا کید جگا دیا جائے تو جائز ہے یا نہیں؟
سوال
اگر نمازیوں کو نماز کے وقت سے گھنٹہ آدھ گھنٹہ پہلے ان کی اجازت سے یا بغیر اجازت اُن کے مکانوں پرجاکر فجر کی نماز کے واسطے بتا کید جگا دیا جائے تو جائز ہے یا نہیں؟
جواب
نماز کے لئے جگانا موجب ثواب ہے مگر وقت سے اتنا پہلے جگانے کی کیا حاجت ہے البتہ ایسے وقت جگائے
کہ استنجاء وضو و غیرہ سے فارغ ہو کر سنتیں پڑھے اور تکبیر اولی میں شامل ہو جائے ۔
READ MORE  Fatawa Rizvia jild 06, Fatwa 608

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to Top