مزارات اولیاء کرام کے چومنے کو کفر یا شرک کہنا کیسا ہے؟
:سوال
مزارات اولیاء کرام علیہم الرحمہ کے چومنے کو کفر یا شرک کہنا کیسا ہے؟
:جواب
فی الواقع بوستہ قبر میں علما مختلف ہیں اور تحقیق یہ ہے کہ وہ ایک امر ہے جو دو چیزوں دامی ( بلانے والے ) و مانع ( منع کرنے والے ) کے درمیان دائر ، مداعی محبت اور مانع ادب تو جسے غلبہ محبت ہو اس پر مواخذہ ( پکڑ نہیں کہ اکابر صحابہ رض اللہ تعالی عنہم سے ثابت ہے اور عوام کے لئے منع ہی احوط ( زیادہ محتاط ہے، ہمارے علماء تصریح فرماتے ہیں
کہ مزارا کا بر سے کم از کم چار ہاتھ کے فاصلے سے کھڑا ہو پر تقبیل ( چومنے ) کی کیا سبیل ۔ ۔ بالجملہ یہ کوئی امر ایسا نہیں جس پر انکار واجب کہ ا کا بر صابہ رضی اللہ تعالی عنھم اور اجلہ آئمہ رحمھم اللہ تعالی سے ثابت ہے تو اس پر شورش ( شور مچانے کی کوئی وجہ نہیں۔ اگر چہ ہمارے نزدیک عوام کو اس سے بچنے ہی میں احتیاط ہے۔
(ص528)
READ MORE  بیٹیوں کی شادی کے لیے رکھی رقم پر زکوۃ ہوگی یا نہیں؟

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to Top