سلام کے بعد پھرنے کا حکم مقتدی کے لیے نہیں
:سوال
مقتدیوں کو یہ حکم کیوں نہیں ؟
:جواب
مقتدی سب ایک حالت پر شریک نماز ہوئے تھے اُن میں سے کسی کا آگے پیچھے ہونا کوئی بالخصوص مقصود و مطلوب ولازم نہ تھا بلکہ اتفاقی طور پر واقع ہوا جو پہلے پہنچ گیا اس نے پہلی صف میں جگہ پائی اور جو بعد میں پہنچے انھوں نے بعد کی صف میں، اگر یہ بعد والے پہلے پہنچتے تو یہی پہلی میں ہوتے اور وہ کہ اگلی صف میں ہیں بعد کو آتے تو بعد کی صف میں ہوتے ،ان کا بیٹھنا ایسا ہے جیسا مجلس کثیر میں لوگوں کا بیٹھنا کہ ایک دوسرے کی طرف پیٹھ ہوتی ہے مگر وہ سب ایک حالت میں ہیں قصد او التزاماً اُن میں ایک دوسرے پر تقدم نہیں بخلاف امام کہ وہ بالقصد آگے ہوتا اور انھیں پیٹھ کرتا ہے اور یہی واجب و لازم اور متعین ہے تو اسے اس قصدی پشت کرنے سے انحراف ( پھر نے ) کا حکم ہوا۔
مزید پڑھیں:نماز کے بعد مقتدی کے لیے مستحب عمل کونسا ہے؟
READ MORE  میت کو غسل دینے کے بعد گھڑے کا کیا کرنا چاہئے؟

About The Author

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to Top