نفلی حج کر کے روضہ اقدس کی زیارت نہ کرنا کیسا؟
: سوال
جو شخص دور دراز سفر کر کے حج نفل کرے اور زیار ت سرور کائنات علیہ التحیۃ والصلٰوة نہ کرے تو وہ مصداق اس حدیث کا ہو سکتا ہے کہ جو شخص حج کرے اور میری زیارت نہ کرے تو اس نے مجھ پر ظلم کیا ، جولوگ کہ ساکن مکہ معظمہ کے ہیں اور نفل حج کے بعد روضہ اقدس کی زیارت نہ کریں تو اس حدیث کے مصداق ہیں یا نہیں ؟
:جواب
من حج ( جس نے بھی حج کیا۔) یقینا عام ہے مکی و آفاقی سب کو شامل اور تکرار سبب تکرار حکم کو مستلزم ۔ نظر ایمانی میں بلاشبہ ہر بار زیارت لازم، اور اسی پر مسلمین کاعمل لاجرم ۔
READ MORE  Fatawa Rizvia jild 04, Fatwa 178

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to Top