مصارف زکوۃ میں عزیزوں سے کون مراد ہیں؟

مصارف زکوۃ میں عزیزوں سے کون مراد ہیں؟

:سوال
یہ جو حکم ہے کہ زکوۃ پہلے اپنے محتاج عزیزوں کو دینی چاہیے، پھر دوسروں کو، اس میں عزیزوں سے مراد کون سے لوگ ہیں؟
: جواب
عزیزوں میں ذورحم محرم مقدم ہیں پھر باقی ذورحم ، ان سے پھیر کر اجنبی کو صدقہ نہ دے، پھیرنے کے معنی کا صدق چاہئے ، مثلا گدا گروں کو جو ایک آدھ پیسہ یا روٹی کا ٹکڑا جاتا ہے کہ اپنے اعزا کو نہیں دے سکتا، اور دے تو وہ نہ لیں گے، وہ ان سے پھیر کر دینا نہ ہوا۔ واللہ تعالیٰ اعلم
مزید پڑھیں:دوکان میں جو سامان موجود ہے اس پر زکوۃ کا حکم؟
READ MORE  درخت پر لگے پھل بیچے تو عشر بائع پر ہوگا یا مشتری پر؟

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to Top