کیا زکوۃ سے کتب خرید کر کسی مدرسہ کے لیے وقف ہو سکتی ہیں؟

کیا زکوۃ سے کتب خرید کر کسی مدرسہ کے لیے وقف ہو سکتی ہیں؟

:سوال
کیا زکوۃ کی رقم سے کتب خرید کر کسی مدرسہ وغیرہ کے لیے وقف ہو سکتی ہیں کہ وہاں پڑھی جاتی رہیں؟
:جواب
مال زکوۃ سے وقف نا ممکن ہے کہ وقف کسی کی ملک نہیں ہوتا اور زکوۃ میں فقیر کی تملیک شرط ہے اس کی تدبیریوں ہو سکتی ہے کہ کسی نیک بندہ کو جو ز کوۃ کا مصرف ہے بہ نیت زکوۃ دے کر ملک کر دیا جائے اور وہ اپنی طرف سے کتا بیں خرید کر وقف کر دے۔
مزید پڑھیں:زكوة کی رقم مدرسہ میں دینا جائز ہے یا نہیں؟
READ MORE  اگر مال کم ہو گیا تو زکوۃ میں کس قدر کمی کی جائے گی؟

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to Top