اعتکاف رمضان آخری عشره پورے میں ہوتا ہے یا کم بھی جائز ہے؟

اعتکاف رمضان آخری عشره پورے میں ہوتا ہے یا کم بھی جائز ہے؟

:سوال
اعتکاف آخر عشره رمضان شریف کا پورے دس روز میں ادا ہوتا ہے یا تین چار روز آخر میں بھی جائز ہے؟
:جواب
اعتکاف عشرہ اخیرہ کی سنت مؤکدہ علی وجہ الکفایہ ہے، جس پر حضور پرنورسید عالم صلی ال ی اللہ تعالٰی علیہ وسلم نے مواظبت و مداومت ( ہمیشگی ) فرمائی پورے عشرہ اخیرہ کا اعتکاف ہے، ایک روز بھی کم ہو تو سنت ادانہ ہوگی، ہاں اعتکاف نفل کے لیے کوئی حد مقرر نہیں، ایک ساعت کا بھی ہو سکتا ہے، اگر چہ بے روزہ ہو۔ ولہذا چاہئے کہ جب نماز کو مسجد میں آئے بیت اعتکاف کر لے کہ یہ دوسری عبادت مفت حاصل ہو جائے گی۔
مزید پڑھیں:عورتیں مشکل کشا علی کا روزہ رکھتی ہیں کیسا ہے؟
READ MORE  امام مسجد روزہ افطار کا حکم دیر سے دے تو اسکا کیا حکم ہوگا؟

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to Top