محتاج سید کو زکوۃ دینا اور اسکا زکوۃ لینا کیسا؟
:سوال
فی زمانہ سیدوں کا کوئی پرسان حال نہیں، فاقوں تک بعض کی نوبت پہنچی ہے، ایسی صورت میں زکوۃ لینایا بغیر اس عذر کے بھی زکوٰۃ لینا جائز ہے یا نہیں؟
:جواب
سید کو ز کوۃ لینا دینا حرام ہے اور اسے دئے زکوٰہ ادا نہیں ہوتی ، اور فاقوں پر نوبت اگر اس بنا پر ہو کہ نوکری یا مزدوری پر قدرت ہے اور نہیں کرنا چاہتا تو یہ فاقہ بھی عذر نہیں ہو سکتا کہ یہ اپنے ہاتھ کا ہے کیوں نہیں کسب حلال کرتا اور اگر واقعی کسب پر قادر نہیں تو مسلمانوں پر فرض ہے کہ اس کی اعانت کریں، اور اگر لوگ بے پروائی کریں اور اُسے کوئی ذریعہ رزق کا سوا زکوۃ لینے کے نہ ہو تو بقدر ضرورت لے اور قدر ضرورت میں صرف کرے۔ واللہ تعالیٰ اعلم
READ MORE  اگر مال کم ہو گیا تو زکوۃ میں کس قدر کمی کی جائے گی؟

About The Author

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to Top