صحیح العقیدہ عالم کی جگہ جاہل کو امام بنانے والے کا شرعی حکم
:سوال
اگر امامت علماء کا حق ہے تو جولوگ سنی صحیح العقیدہ قابل امامت عالم کی جگہ کسی جاہل کو امام بنانے کی کوشش کریں ان کا شرعاً کیا حکم ہے؟
: جواب
بیشک جو عالم دین کے مقابل جاہلوں کو امام بنانے میں کوشش کرے وہ شریعت مطہرہ کا مخالف اور اللہ و رسول اور مسلمانوں سب کا خائن ہے۔ حضور پر نو رسید عالم صلی اللہ تعالی علیہ وسلم نے فرمایا من استعمل رجلا من عصابة وفيهم من هو ارضي الله عنه فقد خان الله ورسوله والمؤمنين ” ترجمہ: جو کسی جماعت سے ایک شخص کو کام مقرر کرے اور اُن میں وہ موجود ہو جو اللہ عز و جل کو اس سے زیادہ پسندیدہ ہے بیشک اس نے اللہ ورسول ( عز وجل وصلی اللہ تعالی علیہ وسلم) اور مسلمانوں سب کے ساتھ خیانت کی۔
المستدرک علی الصحیحسین ، ج 4، ص 92، دارالفکر، بیروت ) (ص 515))
READ MORE  بعض لوگ کہتے ہیں حدیث صحیح نہ ہونے سے مراد موضوع ہونا ہے؟

About The Author

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to Top