مشرکین کے قبرستان کی جگہ عیدگاہ بنانا اور اس میں نماز ادا کرنا کیسا ہے؟
سوال
ایک چبوترا کو جس میں ہڈیاں تک مشرکین کی نظر آتی ہیں لوگ اسے چھوڑ کر جدید عید گاہ میں نماز ادا کرنے سے خاطی گنہگار تو نہ ہوں گے اس چبوترا پر نماز ادا کرنے سے اکثر لوگوں کو اختلاف ہے بلکہ کئی سال ہوئے جب سے چبوترا بنایا گیا اکثر مسلمان دوسری جگہ نماز پڑھنے جاتے تھے اس سال سبھی نے مل کر عیدگاہ پختہ بنوانا شروع کر دی جیسا ارشاد ہو عمل کیا جائے
جواب
شعبان کو یہ سوال آیا تھا جواب دیا گیا کہ اگر چبوترا کی مٹی نجاست کی امیزش نہیں یا زمین ہی کھود کر ان کی نجاستوں سے پاک کر دی گئی تو کوئی مزائقہ نہیں اب سوال میں اظہار ہے کہ اس میں مشرکوں کی ہڈیاں تک نظر اتی ہیں ایسی حالت میں اس پر نماز پڑھنا ہی حرام ہے
READ MORE  سایہ دو مثل پر نماز ظہر کا وقت ختم ہونے اور عصر کا شروع ہونے میں امام عظم علیہ الرحمہ کے قول کو صاحبین کے قول پر کیوں ترجیح حاصل ہے؟

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to Top