کسی کے پاس ضرورت سے زیادہ مکانات ہوں تو ان پر زکوۃ کا حکم؟

کسی کے پاس ضرورت سے زیادہ مکانات ہوں تو ان پر زکوۃ کا حکم؟

:سوال
ایک شخص نے چالیس یا پچاس ہزار کے مکانات اپنی حاجات سے زیادہ صرف کرایہ وصول کرنے کی غرض سے خرید ے، آیا اس صورت میں حاجت سے زیادہ مکانات میں ان کی قیمت کے اوپر زکوۃ فرض ہے یا جو کرایہ ہے اس کے اوپر ہے؟
:جواب
مکانات پر زکوۃ نہیں اگر چہ پچاس کروڑ کے ہوں، کرایہ سے جو سال تمام پر پس انداز ( بچا) ہوگا اس پرزکوۃ آئے گی اگر خود یا اور مال سے مل کر قد ر نصاب ہو۔
مزید پڑھیں:جس کے پاس ذاتی گھر ہو اسے زکوۃ دے سکتے ہیں یا نہیں؟
READ MORE  کیا زکوۃ سے کتب خرید کر کسی مدرسہ کے لیے وقف ہو سکتی ہیں؟

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to Top